Classy Wasi Shah Sad Poetry in Urdu 4 lines

This article delves into the empire of Wasi Shah sad poetry in urdu, examining the ideas, feelings and resonance that characterize his compositions. With his moving and intense poetry, well-known modern Urdu poet Wasi Shah has made a name for himself in the field of Urdu literature. Wasi Shah sad poetry in urdu is praised for his flexibility, but his capacity to convey the nuanced depths of melancholy and despair is one of his most compelling qualities.

wasi shah urdu poetry 4 lines

 

اندھیری رات میں رہتے تو کتنا اچھا تھا

ہم اپنی ذات میں رہتے تو کتنا اچھا تھا

دکھوں نے بانٹ لیا ہے تمہارے بعد ہمیں

تمہارے ہاتھ میں رہتے تو کتنا اچھا تھا

Click to Share 

 

andheri raat mein rehtay to kitna acha tha

hum apni zaat mein rehtay to kitna acha tha

dukhoon ne baant liya hai tumahray baad hamein

tumahray haath mein rehtay to kitna acha tha

wasi shah urdu poetry 4 lines

 

کون روتا ہے یہاں رات کے سناٹوں میں

میرے جیسا ہی کوئی ہجر کا مارا ہو گا

کام مشکل ہے مگر جیت ہی لوں گا اس کو

میرے مولا کا وصی جو نہی اشارہ ہو گا

Click to Share 

 

kon rota hai yahan raat ke sannaton mein

mere jaisa hi koi hijar ka mara ho ga

kaam mushkil hai magar jeet hi lun ga is ko

mere maula ka wasii junhi ishara ho ga

wasi shah urdu poetry 4 lines

 

میں کہتا رہ گیا ویسا نہیں ہوں

سمجھتا ہے مجھے جیسا نہیں ہوں

میری تو گفتگو ہی روح سے ہے

میں تیرے جسم کا پیاسا نہیں ہوں

Click to Share 

 

mein kehta reh gaya waisa nahi hon

samjhta hai mujhe jaisa nahi hon

meri to guftagu hi rooh se hai

mein tairay jism ka piyasa nahi hon

wasi shah urdu poetry 4 lines

 

یہ جو چہرے سے تمہیں لگتے ہیں بیمار ہیں ہم

خوب روئے ہیں لپٹ کر در و دیوار سے ہم

یار کی آنکھ میں نفرت نے ہمیں مار دیا

مرنے والے تھے کہاں یار کی تلوار سے ہم

Click to Share 

 

yeh jo chehray se tumhe lagtay hain bemaar hain hum

khoob roye hain lipat kar dar o deewar se hum

yaar ki aankh mein nafrat ne hamein maar diya

marnay walay thay kahan yaar ki talwar se hum

wasi shah urdu poetry 4 lines

 

ہراک شب میری تازہ عذاب میں گزری

تمہارے بعد تمہارے ہی خواب میں گزری

میں ایک پھول ہوں وہ مجھ کو رکھ کے بھول گیا

تمام عمراسی کی کتاب میں گزری

Click to Share 

 

har ik shab meri taaza azaab mein guzri

tumahray baad tumahray hi khawab mein guzri

mein aik phool hon woh mujh ko rakh ke bhool gaya

tamam umar isi ki kitaab mein guzri

Wasi Shah Sad Poetry in Urdu Theme

Wasi Shah Sad poetry in Urdu explores the human condition profoundly, delving into the depths of grief, heartbreak, and relational complexity. His poetry frequently addresses unfulfilled love, being parted from someone and the suffering that comes with feeling emotions come and go. Wasi Shah weaves a moving tale of human frailty with his words, allowing readers to connect with the innate melancholy that life occasionally bestows.

You can also visit Urdu Poetry

گلیوں گلیوں مجھے ڈھونڈو گے تو یاد آؤں گا

جب بھی اس شہر کو لوٹو گے تو یاد آؤں گا

تم مری آنکھ کے تیور نہ بھلا پاؤ گے

ان کہی بات کو سمجھو گے تو یاد آؤں گا

ہم نے خوشیوں کی طرح دُکھ بھی اکٹھے دیکھے

صفحہ زیست کو پلٹو گے تو یاد آؤں گا

 

wasi shah urdu poetry 4 lines

 

دل میں افسوس آنکھوں میں نمی سی رہتی ہے

زندگی میں شاید کوئی کمی سی رہتی ہے

مجھ سے روٹھ جاتے ہیں اکثر اپنے وصی

شاید میرے خلوص میں کمی سی رہتی ہے

 

Click to Share 

dil mein afsos aankhon mein nami si rehti hai

zindagi mein shayad koi kami si rehti hai

mujh se roth jatay hain aksar apne

wasii shayad mere khuloos mein kami si rehti hai

wasi shah urdu poetry 4 lines

 

کب تلک تجھ پہ انحصار کریں

کیوں نہ اب دوسروں سے پیار کریں

تو کبھی وقت پر نہیں پہنچا

کس طرح تیرا اعتبار کریں

 

Click to Share 

kab talak tujh pay inhisaar karen

kyun nah ab doosron se pyar karen

to kabhi waqt par nahi pouncha

kis terhan tera aitbaar karen

wasi shah urdu poetry 4 lines

 

سمندر میں اترتا ہوں تو آنکھیں بھیگ جاتی ہیں

تیری آنکھوں کو پڑھتا ہوں تو آنکھیں بھیگ جاتی ہیں

تمھارا نام لکھنے کی اجازت چھن گئی جب سے

کوئی بھی لفظ لکھتا ہوں تو آنکھیں بھیگ جاتی ہیں

Click to Share 

 

samandar mein utartaa hon to ankhen bheeg jati hain

teri aankhon ko parhta hon to ankhen bhiig jati hain

tumahra naam likhnay ki ijazat chhin gayi jab se

koi bhi lafz likhta hon to ankhen bheeg jati hain

wasi shah urdu poetry 4 lines

 

بار ہا تجھ سے کہا تھا مجھے اپنا نہ بنا

تو مجھے چھوڑ کے دنیا میں تماشا نہ بنا

ایک بات اور پتے کی میں بتادوں تجھ کو

آخرت بنتی چلی جائے گی دنیا نہ بنا

Click to Share 

 

baarha tujh se kaha tha mujhe apna nah bana

to mujhe chore ke duniya mein tamasha nah bana

aik baat aur pattay ki mein btadon tujh ko

akhirat banti chali jaye gi duniya nah bana

💖💖💖💖💖—–💖💖💖💖💖

میری محفل تھا مری خلوت جاں تھا کیا تھا

وہ عجب شخص تھا اک راز نہاں تھا کیا تھا

بال کھولے ہوئے پھرتی تھیں حسینائیں کچھ

وصل تھا یا کہ جدائی کا سماں تھا کیا تھا

ہائے اس شوخ کے کھل پائے نہ اسرار کبھی

جانے وہ شخص یقیں تھا کہ گماں تھا کیا تھا

تم جسے مرکزی کردار سمجھ بیٹھے ہو

وہ فسانے میں اگر تھا تو کہاں تھا کیا تھا

کیوں وصیؔ شاہ پہ پری زادیاں جاں دیتی ہیں

ماہ کنعان تھا شاعر تھا جواں تھا کیا تھا

💖💖💖💖💖—–💖💖💖💖💖

wasi shah urdu poetry 4 lines

 

عشق کے پالے ہوئے روگ مجھے اچھے لگے

حسن افسردہ ترے سوگ مجھے اچھے لگے

تم میری پہلی محبت ہو مگر یاد رہے

تم سے پہلے بھی کئی لوگ مجھے اچھے لگے

Click to Share 

 

ishhq ke paley hue rog mujhe achay lagey

husn afsurdah tere sog mujhe achay lagey

tum meri pehli mohabbat ho magar yaad rahay

tum se pehlay bhi kayi log mujhe achay lagey

wasi shah urdu poetry 4 lines

 

یہ بھی ممکن ہے کسی روز نہ پہچانوں اسے

وہ جو ہر بار نیا بھیس بدل لیتا ہے

بارہا مجھ سے کہا تھا میرے یاروں نے وصی

عشق دریا ہے جو بچوں کو نگل لیتا ہے

Click to Share 

 

yeh bhi mumkin hai kisi roz nah pahchanu usay

woh jo har baar naya bhais badal laita hai

baarha mujh se kaha tha mere yaaron ne wasii

ishhq darya hai jo bachon ko nigal laita hai

wasi shah urdu poetry 4 lines

 

مجھ سے وہ اکثر کہتی تھی

میری بس اتنی خواہش ہے

کچھ ایسی پہچانی جاؤں

آپ کے نام سے جانی جاؤں

Click to Share 

 

mujh se woh aksar kehti thi

meri bas itni khwahish hai

kuch aisi pehchani jaaun

aap ke naam se jani jaaun

wasi shah urdu poetry 4 lines

 

اب مگر کچھ بھی نہیں کچھ بھی نہیں ہو سکتا

اپنے جذبوں سے یہ رنگین شرارت نہ کرو

کتنی معصوم ہو نازک ہو حماقت نہ کرو

بار ہا تم سے کہا تھا کہ محبت نہ کرو

Click to Share 

 

ab magar kuch bhi nahi kuch bhi nahi ho sakta

apne jazbun se yeh rangeen shararat nah karo

kitni masoom ho naazuk ho hamaqat nah karo

baarha tum se kaha tha ke mohabbat nah karo

wasi shah urdu poetry 4 lines

 

بن پڑے جو بھی آپ سے کیجئے

جائیے کہہ دیا، محبت ہے

یہ بلاٹل کے ہی نہیں دیتی

عشق ہے ، یا کوئی مصیبت ہے

Click to Share 

 

ban parre jo bhi aap se kijiye

jaye keh diya, mohabbat hai

yeh bala tal ke hi nahi deti

ishhq hai, ya koi museebat hai

Conclusion

Wasi Shah is a great poet in the field of Urdu poetry, especially when it comes to conveying deep feelings of melancholy. His poetry entices readers to travel on a path of introspection and empathy because of its poetic beauty and emotional depth. The poignancy of Wasi Shah sad poetry in Urdu melancholic poetry endures beyond temporal and cultural barriers, creating a lasting impression on those who find comfort in his eloquence.

💖You Might Also Like💖

New Year Wishes in Urdu

Best Wisdom Urdu Quotes

Tea / Chai Quotes

Funny Urdu Quotes

Punjabi Poetry Collection

Sad Poetry Urdu

آپ کی دلچسپی کا شکریہ، اگر آپ کو ہماری پوسٹ پسند آئی ہے تو براہ کرم اسے سوشل میڈیا پر شیئر کریں۔ شکریہ

Spread the love

2 thoughts on “Classy Wasi Shah Sad Poetry in Urdu 4 lines”

  1. yeh bhi mumkin hai kisi roz nah pahchanu usay
    woh jo har baar naya bhais badal laita hai
    baarha mujh se kaha tha mere yaaron ne wasii
    ishhq darya hai jo bachon ko nigal laita hai

    Reply

Leave a Comment